Tuesday, March 17, 2015

Gazal by Ateeq Ajmal Wazeer, Gulbarga - 9036847503

غزل

آرام سے سوجاؤ ابھی دھوپ بہت ہے
باہر نہ نکل آؤ ابھی دھوپ بہت ہے

سچ ہے کہ ہمیں ملتی ہے رحت تمہیں دیکھے
تم بام پہ مت آؤ ابھی دھوپ بہت ہے

جو کچھ بھی ہو شاپنگ وہ سبھی شام میں کرلو
بازار نہیں جاؤ ابھی دھوپ بہت ہے

ملنا تو ہمارا نہیں فی الحال ضروری
کل پرسوں چلے آؤ ابھی دھوپ بہت ہے

رخساروں کو گرمی سے بچائے ہوئے رکھنا
گھونگھٹ کو نہ سرکاؤ ابھی دھوپ بہت ہے

بے کار نہیں مان لو اجمل کی یہ باتیں
باہر ذرا دیکھ آؤ ابھی دھوپ بہت ہے


No comments:

Post a Comment