Saturday, March 14, 2015

Gazal by Dr. Syed Chanda Hussaini Akbar, Gulbarga

Dr. Syed Chanda Hussaini Akbar
Cell : 9844707960













ہم وفا کرتے رہے پر وہ دغا دیتے رہے
 دوستی کی آڑ میں ہم کو سزا دیتے رہے

غیر کو بھی منزلوں کا ہم پتہ دیتے رہے
 اور اپنے ہی ہمارا دل دکھادیتے رہے

نفرتوں کے شہر میں بھی پیار سے جیتے رہے
 ظالموں کے ظلم کا ایسا صلہ دیتے رہے

دشمنوں کی خیر بھی چاہی ہے ہم نے ائے خدا
 پر ہمارا آشیاں اپنے جلا دیتے رہے

کون جانے کس گھڑی آئے گی ایک دن موت کی
دشمنوں کو زیست ہی کی ہم دعا دیتے رہے

عیب جوئی سے کسی کا ہو نہیں سکتا بھلا
 اس لئے ہی راز سب کے ہم چھپا دیتے رہے


زندگی کی راہ میں کھائے ہیں دھوکے اس قدر
 پھر بھی اکبرؔ ہم یہاں درس وفا دیتے رہے

No comments:

Post a Comment