اتوار، 23 اکتوبر، 2022

❗🌹 *کلام "جاں نثار اختر"* 🌹❗

❗🌹 *کلام "جاں نثار اختر"* 🌹❗


 *ہم نے کاٹی ہیں تری یاد میں راتیں اکثر* 

 *دل سے گزری ہیں ستاروں کی براتیں اکثر*


 *اور تو کون ہے جو مجھ کو تسلی دیتا* 

*ہاتھ رکھ دیتی ہیں دل پر تری باتیں اکثر*


 *حسن شائستہء تہذیب الم ہے شاید* 

 *غمزدہ لگتی ہیں کیوں چاندنی راتیں اکثر*


 *حال کہنا ہے کسی سے تو مخاطب ہے کوئی* 

 *کتنی دل چسپ ہوا کرتی ہیں باتیں اکثر*


 *عشق رہزن نہ سہی ؛ عشق کے ہاتھوں پھر بھی* 

 *ہم نے لٹتی ہوئی دیکھی ہیں براتیں اکثر*


 *ہم سے اکبار بھی جیتا ہے نہ جیتے گا کوئی* 

 *وہ تو ہم جان کے کھا لیتے ہیں ماتیں اکثر*


 *ان سے پوچھو ! کبھی چہرے بھی پڑھے ہیں تم نے* 

 *جو کتابوں کی کیا کرتے ہیں باتیں اکثر*


 *ہم نے ان تند ہواؤں میں جلاۓ ہیں چراغ* 

 *جن ہواؤں نے الٹ دی ہیں بساطیں اکثر*


 ( *✍🏽" جاں نثار اختر "* )

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

*بحث مت کیجیے* *Speak only* when you feel *your words* are *better than* the silence

 *بحث مت کیجیے*  *Speak only* when you feel *your words* are *better than* the silence. *ڈاکٹر محمد اعظم رضا تبسم* کی کتاب *کامیاب زندگی کے ...