جمعرات، 10 نومبر، 2022

افسانچہ :مجبوری افسانچہ نگار : منظور وقار

افسانچہ :مجبوری

افسانچہ نگار : منظور وقار



مسٹر احمد!! تم ایک ملازم سرکار

ہو تنخواہ بھی معقول ملتی ہے

پھر بھی تمہارے چہرے پر نحوست

کیوں برستی ہے تم کونسی غذا

کھاتے ہو..!؟

جناب !! غذا کھانے سے چہرے پر

نحوست تھوڑے ہی برستی ہے؟؟

آخر تم کیا کھاتے ہو  !!؟؟

رشوت کھاتا ہوں جناب رشوت اا

رشوت کیوں کھاتے ہو..؟؟؟

رشوت کھانا میری مجبوری ہے

اگر رشوت نہ کھاوں تو افسر اعلئ

کو منھ دیکھانے کے قابل کہاں

رہوں گا... ااا 

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

اقوال سر سید،اقبال اور مولانا آزاد

  اقوال سر سید،اقبال اور مولانا آزاد                                                           Sayings of Sir Syed, Iqbal and Maulana Azad...