اتوار، 20 نومبر، 2022

جوہرِ جہانِ غالب ایک شعر کی تشریح ہر مو بدن پہ شہپرِ پرواز ہے مجھے. Explanation of a Stanza of Ghalib

جوہرِ جہانِ غالب

ایک شعر کی تشریح


ہر مو بدن پہ شہپرِ پرواز ہے مجھے

بے تابیِ دلِ تپش انگیز یک طرف

مرزا غالب


تشریح: شاعر کہتا ہے کہ اک طرف میرے بدن پر موجود ہر بال لے اُڑنے والے شہ پر کی طرح ہے تو دوسری طرف تپش یعنی گرمی سے بھرے میرے دل کی بے تابیِ ہے جو مجھے ہر آن بے چین رکھتی ہے۔ اس شعر میں شاعر نے ایٹم کی کیفیت بیان کی ہے۔ مو یعنی بال کو الیکٹران اور دل کو ایٹم کے مرکز میں موجود نیوکلیس تصور کیا ہے۔ انھیں الیکٹرانس کی پرواز اور نیوکلیس کی بے تابیِ کی  وجہ ہے ایٹم مجرد حالت میں نہیں رہ پاتا۔ اسے سکون سے رہنے کے لیے دوسرے ایٹمس سے مل کر مولیکیول بننا پڑتا ہے۔

شارح: افتخار راغبؔ

دوحہ، قطر 


https://www.sheroadab.org/2022/11/Explanation of Ghalib Ghazal by Joveriya Doha Qatar Urdu .html

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

اقوال سر سید،اقبال اور مولانا آزاد

  اقوال سر سید،اقبال اور مولانا آزاد                                                           Sayings of Sir Syed, Iqbal and Maulana Azad...