جمعرات، 17 نومبر، 2022

غزل از عارف احمد عارف Ghazal by arif Ahmed arif

************* غزل ************

Ghazal by arif Ahmed arif 

تیری ان ناز و نزاکت کو سلام

اس قدر ہم پہ عنایت کو سلام


کون کاٹے گا یوں تا عمر سزا

حسن والوں کی عدالت کو سلام


آگ کے منھ میں چلے آتے ہیں

ایسے پروانوں کی ہمت کو سلام


جس سے ملتا نہیں آرام و سکوں

ایسی بے سود : محبت کو سلام


آگ لگ جاتی ہے جس سے دل میں

تیرے سانسوں کی حرارت کو سلام


سارا گلشن ہے خزاں کی زد میں

باغباں تیری نظامت کو سلام


کر کے کیا کیا نہ دکھائے عارفؔ 

میرے مولی ٰ تری قدرت کو سلام

***************************************

عارف محمد عارفؔ 

بھدرک،اڈیشا

17/11/2022 


https://www.sheroadab.org/2022/11/Ghazal by arif Ahmed arif .html

Automatic

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

اقوال سر سید،اقبال اور مولانا آزاد

  اقوال سر سید،اقبال اور مولانا آزاد                                                           Sayings of Sir Syed, Iqbal and Maulana Azad...